کوئٹہ۔ صوبے کی سب سے بڑی سرکاری سول سنڈیمن اسپتال کوئٹہ کا آکسیجن پلانٹ ٹیکنکل اسٹاف نہ ہونے کے باعث تین سال تک خاکروب چلاتے رہے

کوئٹہ۔ صوبے کی سب سے بڑی سرکاری سول سنڈیمن اسپتال کوئٹہ کا آکسیجن پلانٹ ٹیکنکل اسٹاف نہ ہونے کے باعث تین سال تک خاکروب چلاتے رہے

کوئٹہ ۔ سول سنڈیمن اسپتال کوئٹہ کےآکسیجن پلانٹ کا معائنہ کرنے کے لئے کراچی سے پہنچنے والی ماہرین کی خصوصی ٹیم نے فزیکل رپورٹ ایم ایس سول اسپتال کوئٹہ کے حوالے کردی

کوئٹہ ۔ 2016 میں ساڑھے بارہ کروڑ روپے کی لاگت سے نصب کیا جانے والا آکسیجن پلانٹ نان ٹیکنکل افراد کے ہتھے چڑھ کر ناکارہ ہوگیا ۔ ٹیم کی سربراہ سول اسپتال کوئٹہ کو رپورٹ

کوئٹہ ۔ سول سنڈیمن اسپتال کوئٹہ کے آکسیجن پلانٹ میں گیس اور آئل کی سپلائی لائنیں مل چکی ہیں جو دھماکے کا باعث بن کر پوری اسپتال کی بلڈنگ کی تباہی کا باعث بن سکتی ہیں ۔ رپورٹ

کوئٹہ ۔ ٹیکنکل ٹیم کی رپورٹ سنگین صورتحال کی عکاس ہے ذمہ داروں کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ۔ ایم ایس سول اسپتال کوئٹہ ڈاکٹر محمد سلیم ابڑو

کوئٹہ ۔ آکسیجن پلانٹ بیسمنٹ میں ایڈمن دفاتر کے ساتھ نصب کر دیا گیا جو کسی بھی تباہی کا باعث بن سکتا ہے سنگین بدعنوانی کرنے والے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی ضروری ہے ۔ ایم ایس سول اسپتال کوئٹہ

اپنا تبصرہ بھیجیں